پشاور کے خیبر ٹیچنگ اسپتال میں عملے کی لاپرواہی چھ مریض جانبحق جس پر سات اہلکارمعطل

خیبر پختونخواہ (کے پی) کی حکومت نے آکسیجن گیس کی عدم دستیابی کے باعث 6 مریضوں کی ہلاکت کے الزام میں پشاور کے خیبر ٹیچنگ اسپتال کے سربراہ سمیت 7 اہلکاروں کو معطل کردیا ہے۔

خیبر پختونخوا کے پشاور کا دوسرا سب سے بڑا تدریسی اسپتال (خیبر ٹیچنگ اسپتال) میں آکسیجن گیس کی کمی کی وجہ سے چھ مریضوں کی موت ہو گئی تھی۔

اس واقعے کا اعتراف پی ٹی آئی حکومت نے کیا تھا اور صوبے کے وزیر صحت تیمور سلیم جاگڑا نے تحقیقات کے لئے ایک کمیٹی بنائی تھی۔

انہوں نے آج ٹویٹر پر ایک رپورٹ شائع کی جس میں اس واقعے کی تحقیقات کی تفصیل دی گئی ہے۔

رپورٹ میں اعتراف کیا گیا ہے کہ اسپتال میں آکسیجن کی کمی کی وجہ سے کرونا کے پانچ مریضوں کی موت ہوگئی تھی اور آکسیجن کی کمی کی وجہ سے حساس وارڈ میں ایک اور مریض ہلاک ہوگئے تھے۔

رپورٹ میں کہا گیا ہے کہ اگر موجودہ آکسیجن ٹینک ختم ہوجائے تو اسپتال میں کوئی دوسرا متبادل ٹینک یا نظام موجود نہیں۔