مشال قتل کے مرکزی ملزم کی سزائے موت کو مسترد کرنے کے خلاف اقبال خان سپریم کورٹ جائیں گے

عبدالولی خان یونیورسٹی میں مذہب کی توہین کے الزام میں قتل ہونے والے مشال خان کے والد اقبال خان کا کہنا ہے کہ وہ مشال خان کے قتل کے مرکزی ملزم عمران علی کی سزائے موت کو عمر قید میں تبدیل کرنے کے پشاور ہائی کورٹ کے فیصلے کے خلاف سپریم کورٹ جائیں گے۔

جمعرات (19 نومبر) کو جسٹس لال جان خٹک اور جسٹس عتیق شاہ پر مشتمل پشاور ہائی کورٹ کے دو ججوں کے بنچ نے فیصلہ سنایا۔

عدالت نے کیس میں ضمانت پر رہا 25 افراد کی ضمانت مسترد کرتے ہوئے ان کی گرفتاری کا حکم دیتے ہوئے ان کی تین سال قید برقرار رکھی ہے۔

اس معاملے میں مشال خان کے والد کے وکیل بیرسٹر عامر چمکانی نے کہا کہ عمران کی سزا موت کو عمر قید تک محدود کردی گئی ہے۔ مزید سات افراد کی ضمانت منسوخ کردی گئی اور ان کی عمر قید سزاؤں کو برقرار رکھا گیا ہےاور ۲۵ مزید کی ضمانت منسوخ کرکے انہیں تین سال قید کی سزا اور عدالت کے کمرے سے گرفتار کرنے کا حکم دیا گیا۔

یہ فیصلہ، عدالت نے ستمبر کے آخر میں محفوظ کیا تھا ۔