تالبان بامیان کے بدھا سے لے کر رحمن بابا کے مزار تک اور سوات کے فنکاروں سے لے کر خاشہ ځوان تک کردارو سے کیوں خوفزدہ ہیں

تحریکِ تالبان پاکستان نے چارسدہ سے تعلق رکھنے والے صدارتی ایوارڈ یافتہ مزاحیہ اداکار عالم زیب مجاہد کو جان سے مارنے کی دھمکیاں دی تھی، کہ اداکاری اور مزاح نگاری چھوڑ کر تبلیغی جماعت کے ساتھ وقت لگائے اور سنت کے مطابق داڑھی رکھے۔ تبلیغ میں چار مہینے لگانے کے بعد بھی طالبان کو عالمزیب مجاہد کے مسلمان ہونے کا یقین نہ آیا تو وہ بدقسمت پشتون قوم کا اداکار اور صدارتی یافتہ مزاح نگار اپنی زندگی کی خاطر ملک چھوڑ کر ملیشیاء بھاگ گیا۔ میرے خیال میں آج کل وہ امریکہ میں ٹیکسی چلا کر گزارہ کر رہا ہے۔

کل افغانستان میں ہونہار سٹوڈنٹس نے ایک مقامی کامیڈین نظر محمد عرف خاشہ ځوان کو قتل کیا جِس پیشہ جنگ زدہ افغانستان کے غم زده باسيوں کے چہروں پر مسکراہٹیں بکھیرنا تھا، یعنی وہ ایک خوش مزاج مزاح نگار تھا۔ کل خاشہ ځوان کو افغانستان کے صوبہ قندہار کے علاقے سپین بولدک میں گھر سے اغوا کیا گیا اور پھر قتل کیا گیا۔ منظر عام پر آنے والی اسکی آخری ویڈیو میں دیکھا جاسکتا ہے کہ جب طالبان اسکو تشدد کا نشانہ بنارہے ہوتے ہیں، تو خاشہ ځوان اُس وقت بھی اپنے بے رحم اور احساسات سے عاری قاتلوں کو ہنسانے کی کوشش کررہا ہوتا ہے لیکن وہ خون بہانے کے علاوہ اور کوئی زبان کہاں سمجھتے ہیں۔ ویڈیو میں فسادیوں کو یہ کہتے ہوئے سُنا جا سکتا ہے کہ “اِس خبیث کو لٹکا دو”۔

لوگ افسوس کرتے ہوئے سوال کرتے ہیں کہ قاتلوں نے خاشہ ځوان جیسے بے ضرر اور ہنس مُک بندے کو کیوں مارا؟ کیونکہ نہیں مارینگے بھائی؟ اِن کو اور آتا کیا ہے؟ چھٹی صدی عیسوی میں اٹکے ہوئے یہ کرائے کے قاتل بامیان کے بدھا سے لے کر رحمࣿن بابا کے مزار تک اور سوات کے فنکاروں سے لے کر خاشہ ځوان تک ہے اُس چیز کو ختم کرنے کے درپے ہیں جِس میں زندگی نظر آرہی ہو اور ہمارے فن اور تاریخ کا حصہ ہو۔ اِن کا بنیادی مقصد صرف افغانستان کو اپنے زیر اثر لانے کے ساتھ ساتھ وہاں سے افغانوں کے فنون لطیفہ، تاریخ، زبان، کلچر، طرز زندگی اور شناخت کو مٹانا بھی ہے اور اپنے ماضی سے توڑنا ہے۔ ان وحشیوں کے نزدیک زندگی، امن، ہنسی، فن، تاریخ اور طنز و مزاح ایک سنگین جُرم ہے۔ افغان ہونے کے علاوہ فنون لطیفہ سے وابستگی اور افغانوں کے چہروں مسکراہٹیں لانا ہی اُن کا جرم تھا کیونکہ اُن کے قاتلوں نے ۳۰ سالوں سے مسکراہٹوں اور زندگیوں کو ختم کرنے کا ٹھیکا لیا ہوا ہے۔